ایک درد یہ بھی۔۔

بہت عرصے بعد احساس ہوا کے ہمارا احساس ابھی مرا نہیں ہے، زیادہ بہادری، شوخے پن یا اور کسی وجہ سے اُس کو کہیں دفن کر آئے تھے یہ احساس کافی سالوں بعد ہو رہا تھا ، اتنے سالوں بعد کے سمجھ بھی نہیں آرہا تھا کے اس احساس کو کیا نام دیں یا اس احساس کو بولتے کیا ہیں ، کچھ دماغ پہ زور ڈالنا چاہا تو اُس نے فوراََ ہی معذرت کرلی ، جیسے کسی بہت ہی قریبی نے اہم ضرورت میں ساتھ چھوڑ دیا ہو۔ خیر لمحوں بعد ہی اسکو ہماری حالتِ زار پہ ترس آگیا تھا اور کسی سچے مخلص کی طرح ہماری مدد کو حاضر تھا۔ گزشتہ احساسات کو ناپ تول کے ہمیں یہ اندیشہ دیا کے کہیں یہ درد تو نہیں ، درد ؟

درد یہ درد کیا ہوتا ہے ، اس کے لفظی معنٰی کیا ہوتے ہیں اور اس کو واضع کیسے کرتے ہیں؟ ، ایسے کئی سوال لمحہ بہ لمحہ ہمارے دماغ میں جنم لے رہے تھے۔ دماغ جو کے اپنی معمول کی رفتار سے دوڑنا شروع کرچکا تھا کچھ ہماری رہنمائی کے قابل ہوگیا تھا۔ جو واقع دماغ کو مفلوج کردے وہ درد ہی تو دے رہا ہے ہاں ۔۔ ، شاید نہیں ، بلکہ بلکل ہاں یہی تو درد ہے۔ اب تک صرف جسمانی نقصان اور جسمانی تکلیف کو ہی درد تسلیم کر رہے تھے مگر دماغ کا کیا جو دن بھر درد پہ درد سہے جا رہا ہوتا ہے ، خون کے گھونٹ پیے جا رہا ہوتا ہے۔ آج کچھ ایسا ہی دماغ کو مفلوج کردینے والا واقع رونما ہوا جس کے بعد آنے والے جھٹکے ابھی بھی محسوس کیے جا سکتے ہیں ، دل ۔۔۔،  نہیں دل نہیں صرف دماغ ہمارا صرف وہی کام کرتا ہے۔ ہمارا موبائل ، اکلوتا تو خیراب نہیں تھا ، مگر دل و جان سے عزیز تھا۔ شاید کسے دوست وغیرہ  سے بھی بچھڑنے پر وہ درد محسوس نہیں ہوتا جو اپنے نیکسز 5 ایکس کے چلے جانے پر محسوس کیا، 10 منٹ کے لیے تو سمجھ ہی نہیں آیا کے  کیا دنیا ابھی بھی بقی ہے ؟ کل کا سورج طلوح ہوگا بھی یا نہیں کچھ ایسے ہی احساسات کے ساتھ اِس آس میں ہیں کے شاید کراچی کی موبائل مارکیٹ کوئی کارنامہ انجام دے اور ہمیں اپنے موبائل کا ساتھ نصیب ہو، آمین۔

Advertisements

2 thoughts on “ایک درد یہ بھی۔۔”

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s